نیوزی لینڈ میں اصل انسانی لاشوں کی نمائش، 13لاکھ روپے کے انگوٹھے چوری


ڈی ورلڈ وائٹلز میں رکھی ایک لاش جو دنیا بھر میں نمائش کے لیے بھیجی جاتی ہے۔ فوٹو: بشکریہ آک لینڈ نیوز

نیوزی لینڈ: اصل انسانی لاشوں کی نمائش سے ایک شخص نے نہایت چالاکی سے پیرکے دوانگوٹھے کاٹ کرچرالیے۔
اصل انسانی لاشوں کی نمائش سے ایک شخص نے نہایت چالاکی سے پیر کےدو انگوٹھے کاٹ کرچرالیے۔ پولیس نے واقعے کے بعد مشتبہ شخص کو گرفتار کرلیا جس نے نمائش میں رکھی ایک لاش کے دونوں انگوٹھے چرائے تھے اور ان کی قیمت تیرہ لاکھ روپے سے بھی ذیادہ بتائی جارہی ہے۔ نیوزی لینڈ ہیرالڈ کے مطابق اس شخص پر چوری اور نامعلوم شخص کی لاش میں دخل اندازی اور بے حرمتی کے الزامات بھی عائد کیے گئے ہیں۔
پہلی مرتبہ اس شخص کو آکلینڈ کے ڈسٹرکٹ کورٹ میں پیش کیا گیا جہاں اس کی ضمانت ہوگئی اور اس کے بعد وہ سال کے آخر تک ویلنگٹن ڈسٹرکٹ کورٹ میں دوبارہ پیش ہوگا۔
اصل انسانی لاشوں کی اس عجیب و غریب نمائش کا نام ’باڈی ورلڈ وائٹلز‘ تھا جو ایک سفری نمائش تھی اور پہلی مرتبہ آکلینڈ میں منعقد ہوئی تھی جہاں سے لاش سے انگوٹھے چرالیے گئے۔ 1997 میں شروع ہونے والی اس نمائش کو دنیا بھر میں بھیجا جاتا ہے جہاں میڈیکل اسکول اور طب کے طالبعلم اسے دیکھ کر جانتے اور سیکھتے ہیں۔
ڈاکٹرون ہیجنز انسٹی ٹیوٹ فور پلاسٹنیشن کو اب تک 17000 لاشیں عطیہ کی جاچکی ہیں جنہیں بہت خاص انداز میں پیش کیا جاتا ہے اور ان سے بہت کچھ سیکھنے میں مدد ملتی ہے۔
Share on Google Plus

رابطہ کریں:

ہمارا کوئی بھی دوست ہم سے کمنٹ کے ذریعے بھی رابطہ کر سکتا ہے۔ہم اپنی پہلی ہی فرصت میں آپ کے سوالات کا جواب دیں گے۔
ایک تبصرہ شائع کریں