الاثنين، 9 يناير، 2017

ایڈیشنل سیشن جج کے گھر میں تشدد کا نشانہ بننے والی طیبہ کوبازیاب کرالیا گیا

0 comments
طیبہ پر تشدد کی خبریں میڈیا پر آنے کے بعد چیف جسٹس آف پاکستان نے واقعے کا ازخود نوٹس لیا تھا۔ فوٹو: فائل
طیبہ پر تشدد کی خبریں میڈیا پر آنے کے بعد چیف جسٹس آف پاکستان نے واقعے کا ازخود نوٹس لیا تھا۔ فوٹو: فائل

 اسلام آباد: ایڈیشنل سیشن جج کے گھر میں تشدد کا نشانہ بننے والی کم سن ملازمہ طیبہ کو پولیس اور قانون نافذ کرنے والے اداروں نے بازیاب کرالیا۔
 ایڈیشنل سیشن جج کے گھرمیں تشدد کا نشانہ بننے والی کم سن ملازمہ طیبہ کو پولیس اور قانون نافذ کرنے والے اداروں نے کارروائی کے دوران اسلام آباد کے مضافاتی علاقے سے بازیاب کرالیا جب کہ طیبہ اس وقت پولیس کے تحویل میں ہے۔
کمسن ملازمہ طیبہ پر تشدد کی خبریں میڈیا پر آنے کے بعد چیف جسٹس آف پاکستان نے واقعے کا ازخود نوٹس لیا تھا جس کے بعد سے طیبہ لاپتہ تھی تاہم پولیس بچی اور اس کے والدین کی تلاش کے لئے چھاپے ماررہی تھی جب کہ پولیس نے طیبہ کی پھوپھی کوگرفتارکرکے تفتیش شروع کردی تھی۔
واضح رہے کہ چند روز قبل ایڈیشنل سیشن جج کے گھر میں کام کرنے والی بچی طیبہ پر تشدد کیس سامنے آیا تھا جب کہ میڈیکل رپورٹ میں بچی پر تشدد کے واضح  ثبوت سامنے آئے تھے جس کے بعد جج اور ان کی اہلیہ کے خلاف مقدمہ بھی درج کرلیا گیا تھا۔

جدید ترین عجیب و غریب ایجادات

0 comments
ویسے تو کنزیومر الیکٹرونکس شو میں دنیا بھر سے ہزاروں نت نئی مصنوعات رکھی گئی ہیں مگر ان میں سے کچھ جدت اور انفرادیت کے تقاضوں پر ایک ساتھ پوری اترتی ہیں۔ (فوٹو: فائل)
ویسے تو کنزیومر الیکٹرونکس شو میں دنیا بھر سے ہزاروں نت نئی مصنوعات رکھی گئی ہیں مگر ان میں سے کچھ جدت اور انفرادیت کے تقاضوں پر ایک ساتھ پوری اترتی ہیں۔ (فوٹو: فائل)

لاس ویگاس: سی ای ایس 2017 میں رکھی گئی کچھ ایسی مصنوعات کا احوال جو جدید ہونے کے ساتھ ساتھ انتہائی عجیب و غریب بھی ہیں۔
جدید مصنوعات اور ٹیکنالوجی کی سب سے بڑی سالانہ نمائش ’’کنزیومر الیکٹرونکس شو‘‘ امریکی شہر لاس ویگاس میں پوری آب و تاب کے ساتھ جاری ہے۔ یوں تو اس نمائش میں دنیا بھر سے ہزاروں نت نئی مصنوعات رکھی گئی ہیں مگر ان میں سے کچھ جدت اور انفرادیت کے تقاضوں پر ایک ساتھ پوری اترتی ہیں۔
یہاں ایسی ہی کچھ مصنوعات، اختراعات اور ایجادات کا مختصر احوال پیش کیا جارہا ہے:
فون پر بے آواز گفتگو
’’ہش می‘‘ (Hushme) کہلانے والے اس آلے کو ہیڈ فون کے بجائے ماؤتھ پیس کہنا چاہئے جسے منہ پر پٹی کی طرح باندھا جاتا ہے البتہ پٹی کے اندرونی حصے میں اتنی گنجائش ہوتی ہے کہ بات چیت کرنے کےلئے ہونٹ ہلائے جاسکتے ہیں۔
اس کا مقصد لوگوں کو اس طرح سے فون پر بات کرنے کی سہولت فراہم کرنا ہے کہ دوسرے ان کی آواز نہ سن سکیں کیونکہ ’’ہش می‘‘ کو خاص طور پر اس طرح ڈیزائن کیا گیا ہے کہ بولنے والے کی آواز اس سے باہر نہ جاسکے اور آس پاس بیٹھے لوگوں کے کام میں خلل نہ پڑے۔ فی الحال یہ ایک پروٹوٹائپ کی شکل میں ہے جسے سی ای ایس میں رکھنے کا مقصد تجارتی پیمانے پر اس کی تیاری کےلئے سرمایہ کاروں کو متوجہ کرنا ہے۔
سمجھدار کنگھا
اس ذہین کنگھے کا نام کیراسٹیز ہیئر کوچ رکھا گیا ہے جس کے اندر ایک حساس مائیکروفون نصب ہے جو اسے بالوں میں پھیرتے دوران رگڑ سے پیدا ہونے والی آوازیں سنتا ہے۔ ان آوازوں کی مدد سے یہ آپ کے بالوں، سر کی کھال اور ارد گرد کے ماحول سے واقفیت حاصل کرتا ہے اور صحیح طرح سے ہیئر برش کرنے کےلئے آپ کی رہنمائی بھی کرتا ہے۔
اس کی قیمت صرف 200 ڈالر رکھی گئی ہے۔
بدبو خارج کرکے جگانے والی گھڑی
150 ڈالر میں فروخت کےلئے رکھی گئی یہ گھڑی الارم کے وقت پر گھنٹی نہیں بجاتی بلکہ تیز بدبو خارج کرنے لگتی ہے جو سوتے ہوئے کو جاگنے پر مجبور کردیتی ہے۔ یہ گھڑی سینسرویک اوریا نامی کمپنی نے تیار کی ہے جبکہ مصنوعی لیکن بے ضرر بدبو کا پیٹنٹ بھی اسی کمپنی کے نام ہے۔
مخملی احساس والی ٹچ اسکرین
یہ ایک خاص ٹچ اسکرین ہے جسے چھونے والے کو یوں لگتا ہے جیسے اس نے شیشے سے بنی ٹچ اسکرین نہیں بلکہ کسی مخملی کپڑے کو چھو لیا ہو۔ اندازہ ہے کہ ’’ٹینواس‘‘ نامی اس ٹچ اسکرین میں مخمل جیسے احساس کےلئے بالائی شیشے میں معمولی سی تھرتھراہٹ پیدا کی جاتی ہے جو ہماری حسیات کو یہ دھوکے میں مبتلا کریتی ہیں اور ہم یہ سمجھنے لگتے ہیں جیسے ہم نے ریشم یا مخمل کی سطح چھو لی ہے۔
ابھی صرف اس کا پروٹوٹائپ ہی پیش کیا گیا ہے اس لئے قیمت نہیں بتائی گئی۔
بلیو ٹوتھ ٹوسٹر
گرفن ٹیکنالوجی کا بنایا ہوا یہ ٹوسٹر بلیو ٹوتھ کے ذریعے آپ کے اسمارٹ فون سے رابطے میں رہتا ہے اور دی گئی ہدایات پر اپنے اندر رکھے ہوئے ٹوسٹس کو کم یا زیادہ سینکتا ہے۔ اسے صرف 100 ڈالر میں خریدا جاسکتا ہے۔
مامتا سے بھرپور پنگھوڑا
اس کی شکل و صورت پر نہ جائیے کیونکہ اسے شیرخوار بچوں کو آرام سے سلانے والا ذہین ترین جھولا (پنگھوڑا) بھی قرار دیا جارہا ہے۔ ’’دی ہیپیئسٹ بے بی سنُو‘‘ کہلانے والے اس پنگھوڑے کی قیمت بہت زیادہ ہے جو 1150 ڈالر (تقریباً سوا لاکھ پاکستانی روپے) رکھی گئی ہے لیکن یہ بچے کی حرکت پر نظر رکھنے والے خودکار نظام سے لیس ہے جو شیرخوار کی پرسکون نیند کےلئے پنگھوڑا جھلانے والی موٹروں کی حرکت میں کمی بیشی لاتا رہتا ہے۔
جذبات شناس کیمرا
یہ کیمرہ صرف آپ کا چہرہ ہی نہیں پہچانتا بلکہ آپ کے چہرے سے ظاہر ہونے والے جذبات بھی خوب سمجھتا ہے۔ اسے ’’ہبل ہیوگو اسمارٹ کیم‘‘ کا نام دیا گیا ہے اور یہ چہرہ شناسی کی جدید ترین ٹیکنالوجی کی مدد سے معلوم کرلیتا ہے کہ سامنے موجود شخص کا چہرہ تھکن کو ظاہر کررہا ہے، خوف کو، خوشی کو، غم کو یا پھر غصے وغیرہ کو۔
اپنی ان ہی خصوصیات کی بناء پر اسے نفسیاتی اسپتالوں میں استعمال کیا جاسکے گا۔ سی ای ایس میں ہبل ہیوگو کی 250 سے 300 ڈالر میں ایڈوانس بکنگ جاری ہے جبکہ اس کی پہلی تجارتی کھیپ جون 2017 تک مارکیٹ میں آنے کی توقع ہے۔
سب سے آرام دہ بستر
سی ای ایس میں رکھی گئی دوسری کئی مصنوعات کی طرح ’’سلیپ نمبر 360‘‘ نامی یہ مسہری بھی مکمل خودکار ہے جو نہ صرف یہ یاد رکھتی ہے کہ آپ کس حالت میں سکون سے سوتے ہیں بلکہ سوتے دوران آپ کے پیروں کو ضروری گرمی بھی فراہم کرتی ہے۔
خراٹے آنے پر یہ سرہانے کو تھوڑا سا اونچا کردیتی ہے تاکہ خراٹے رک جائیں جبکہ رات کے کسی حصے میں اگر آپ کروٹ یا جگہ تبدیل کرتے ہیں تو یہ اس جگہ سے گدے کو تھوڑا سا پچکا دیتی ہے تاکہ آپ کی نیند میں خلل نہ پڑے۔ اس کی قیمت معلوم نہیں۔
شفاف اور سمجھدار ریفریجریٹر
ایل جی کے تیار کردہ ’’اسمارٹ انسٹا ویو ریفریجریٹر‘‘ کا دروازہ 29 انچ چوڑی ٹچ اسکرین سے بنا ہے جو ہلکے ہاتھ سے دو مرتبہ کھٹکھٹانے پر شفاف ہوجاتی ہے اور آپ ریفریجریٹر کا دروازہ کھولے بغیر ہی اس میں رکھے سامان کا جائزہ لے سکتے ہیں۔
اس کے علاوہ یہ ریفریجریٹر خودکار طور پر ایمیزون کمپنی کے ’’ایکو‘‘ آن لائن اسٹور سے بھی رابطے میں رہتا ہے اور جیسے ہی اس میں ضروری پھل یا سبزیاں ختم ہونے لگتی ہیں یہ فوری طور پر انہیں آپ کی شاپنگ لسٹ میں شامل کردیتا ہے۔ اس کی قیمت بھی اب تک متعین نہیں کی گئی ہے۔
تھکاوٹ سے خبردار کرنے والے جوتے
انڈر آرمر نامی کمپنی نے ’’جیمنی‘‘ کے نام سے یہ جوتے تیار کئے ہیں جنہیں پہن کر آپ کو صرف چھ مرتبہ تھوڑا سا اچھلنا ہوگا اور یہ ایک ایپ کے ذریعے آپ کو بتادیں گے کہ آج آپ دوڑنے کے قابل ہیں یا نہیں۔
ویسے تو انہیں ایتھلیٹس کےلئے تیار کیا گیا ہے لیکن عام لوگ بھی ان سے فائدہ اٹھا سکتے ہیں۔ البتہ جیمنی بھی فی الحال تجرباتی مرحلے پر ہے اس لئے قیمت کا تعین نہیں کیا گیا ہے۔
کفایت شعار فوارہ
ہائیڈرو فرسٹ شاور صرف ایک خوبصورت فوارہ ہی نہیں بلکہ یہ نہانے والے کو اپنی ایل ای ڈیز کی رنگت تبدیل کرکے بتاتا رہتا ہے کہ وہ کتنی مقدار میں پانی استعمال کررہا ہے تاکہ پانی غیر ضروری طور پر ضائع نہ کیا جائے۔ یہ صرف 99 ڈالر کا ہے۔
تھری ڈی پروجیکٹر
ریزر کمپنی ’’پروجیکٹ ایریانا‘‘ کے نام سے ایک ایسے گیمنگ پروجیکٹر پر کام کررہی ہے جو صرف ایک دیوار نہیں بلکہ کمرے میں تمام دیواروں اور چھت تک کو ویڈیو گیم اسکرین میں تبدیل کردے گا یعنی آگے پیچھے اور دائیں بائیں کے علاوہ یہ چھت کو بھی ویڈیو گیم کے منظر سے روشن کردے گا اور کھیلنے والا یوں محسوس کرے گا جیسے وہ خود بھی اسی ویڈیو گیم کا حصہ بن گیا ہے۔
چونکہ یہ ابھی پروٹوٹائپ مرحلے پر ہے اس لئے قیمت کا تعین بھی نہیں کیا گیا ہے۔

کمپیوٹر میموری میں مائیکرو پروسیسر

0 comments
ری ریم کا یہ پروٹوٹائپ بہ یک وقت ریم اور مائیکرو پروسیسر، دونوں کا کام کرسکتا ہے۔ (فوٹو: فائل)
ری ریم کا یہ پروٹوٹائپ بہ یک وقت ریم اور مائیکرو پروسیسر، دونوں کا کام کرسکتا ہے۔ (فوٹو: فائل)

سنگاپور: وہ دن دور نہیں جب کمپیوٹر کو زیادہ طاقتور بنانے کے لئے اس میں نیا مائیکروپروسیسر لگانے کی کوئی ضرورت نہیں ہوگی بلکہ یہ کام صرف میموری (ریم) میں اضافے ہی سے ممکن ہوجائے گا۔
این ٹی یو سنگاپور اور مختلف یورپی اداروں سے وابستہ انجینئروں کی ایک بین الاقوامی ٹیم نے کمپیوٹر ریم کو بطور مائیکروپروسیسر استعمال کرنے کا ایک اچھوتا طریقہ دریافت کرلیا ہے جس میں نئی قسم کی ’’ری ریم‘‘ (ReRAM) کے ڈیزائن میں تھوڑی سی تبدیلی کی گئی ہے۔
ریسرچ جرنل ’’نیچر سائنٹفک رپورٹس‘‘ میں شائع ہونے والی تفصیلات کے مطابق ریم میں ڈیٹا کو بائنری سسٹم (دو ممکنہ حالتوں) کے تحت وقتی طور پر محفوظ کیا جاتا ہے جبکہ ’’ری ریم‘‘ ڈیزائن میں کچھ ایسی تبدیلیاں کی گئی ہیں جن کی بدولت اس پر کوارٹنری سسٹم (چار ممکنہ حالتوں) میں ڈیٹا محفوظ کیا جاسکتا ہے۔
تجربات کے دوران تبدیل شدہ ’’ری ریم‘‘ کی دو ممکنہ حالتیں استعمال کرتے ہوئے ان میں بائنری ڈیٹا محفوظ کیا گیا جبکہ باقی رہ جانے والی دو حالتوں سے پروسیسنگ کا کام لیا گیا۔
آسان الفاظ میں یہ بھی کہا جاسکتا ہے کہ ری ریم کا یہ پروٹوٹائپ بہ یک وقت ریم اور مائیکروپروسیسر، دونوں کا کام کرسکتا ہے۔
ماہرین کا کہنا ہے کہ اس ترمیم شدہ ری ریم کو بڑے پیمانے پر تیار کرنے کے لئے موجودہ ٹیکنالوجی میں بہت معمولی سی تبدیلی کرنا پڑے گی اور اس پر بہت زیادہ سرمایہ بھی خرچ نہیں ہوگا۔ یعنی امید کی جاسکتی ہے کہ جلد ہی ایسے ڈیسک ٹاپ اور لیپ ٹاپ کمپیوٹرز کے علاوہ اسمارٹ فون بھی منظرِ عام پر آجائیں گے جو اپنی کم تر موٹائی باوجود زیادہ تیز رفتار اور طاقتور بھی ہوں گے کیونکہ ان کی میموری ہی میں تمام پروسیسنگ کی جارہی ہوگی۔
اسی پر بس نہیں بلکہ نئی ’’ری ریم‘‘ کے باعث مختصر اور کہیں زیادہ باصلاحیت برقی آلات کی ایک پوری نئی نسل بھی وجود میں آجائے گی۔
اندازہ ہے کہ ابتداء میں یہی تکنیک آزماتے ہوئے ایسی یو ایس بی اسٹوریج ڈیوائسز تیار کی جائیں گی جو کمپیوٹر سے منسلک ہوکر نہ صرف اپنے اندر ڈیٹا محفوظ کریں گی بلکہ اضافی طور پر کمپیوٹر کی رفتار بھی بڑھا دیں گی۔

سگریٹ نوشی سے چھٹکارا دلانے والی اسمارٹ فون ایپ

0 comments
اس ایپ میں ایک گیم ہے جس کے دوران کھیلنے والے کو کم سے کم وقت میں زیادہ سے زیادہ سگریٹیں توڑنی ہوتی ہیں۔ (فوٹو: فائل)
اس ایپ میں ایک گیم ہے جس کے دوران کھیلنے والے کو کم سے کم وقت میں زیادہ سے زیادہ سگریٹیں توڑنی ہوتی ہیں۔ (فوٹو: فائل)

لندن: برطانوی ماہرین نے گیم کی شکل میں ایک ایسی اسمارٹ فون ایپ تیار کرلی ہے جس کا مقصد سگریٹ نوشی سے چھٹکارا پانے میں مدد فراہم کرنا ہے۔
’’سگ بریک فری‘‘ (CigBreak Free) نامی اس سادہ سی ایپ میں ایک گیم ہے جس کے دوران کھیلنے والے کو کم سے کم وقت میں زیادہ سے زیادہ سگریٹ توڑنی ہوتی ہیں۔ ہر لیول مکمل کرنے پر کھیلنے والے کو کچھ پوائنٹ ملتے ہیں لیکن گیم کے آگے بڑھنے پر سگریٹ توڑنے کا عمل پیچیدہ اور مشکل ہوتا جاتا ہے جبکہ اسی کے ساتھ ہر ایک سگریٹ توڑنے پر ملنے والے پوائنٹس بھی زیادہ ہوتے رہتے ہیں۔
ہر لیول کی کامیاب تکمیل پر ایک سرٹیکفیٹ بھی نمودار ہوتا ہے جس میں کھیلنے والے کو مبارکباد دی جاتی ہے کہ اس نے اپنے پھیپھڑوں کی گنجائش میں اضافہ کر لیا ہے جبکہ کھانے کی کوئی صحت بخش چیز بھی اسمارٹ فون کی اسکرین پر بطور انعام ظاہر ہوجاتی ہے۔
اس ایپ کے مرکزی موجد اور کنگسٹن یونیورسٹی میں کمپیوٹر سائنس کے ماہر، ہوپ کیٹن کا کہنا ہے کہ یہ صرف کوئی کھیل نہیں بلکہ اس کی تیاری میں سوچ اور کردار تبدیل کرنے سے متعلق 30 سے زائد نفسیاتی تکنیکوں کا استعمال بھی کیا گیا ہے جن کے تحت کھیل کے دوران ہی مختلف پیغامات بھی اسکرین پر آتے رہتے ہیں اور کھیلنے والے کو لاشعوری طور پر بار بار قائل کرتے ہیں کہ وہ عملی زندگی میں بھی سگریٹ چھوڑ دے۔
اگرچہ اس سے پہلے بھی چند ایپس میں سگریٹ نوشی ترک کرنے کے پہلو پر توجہ دی گئی ہے لیکن یہ پہلی ایپ ہے جسے بطورِ خاص اسی مقصد کےلئے بنایا گیا ہے۔
اس ایپ کو روزانہ پابندی سے کھیلنے کے نتیجے میں سگریٹ پینے کی خواہش بتدریج کم ہوتی چلی جاتی ہے اور اگر سگریٹ نوش اپنی اس عادت سے چھٹکارا پانے میں واقعی سنجیدہ ہو تو وہ کچھ عرصے میں خود ہی اس کھیل میں بار بار نمودار ہونے والے پیغاموں سے متاثر ہوکر سگریٹ نوشی چھوڑ دیتا ہے۔
واضح رہے کہ تمباکو نوشی اپنے آپ میں دل، شریانوں اور خون کی متعدد بیماریوں کے علاوہ کینسر کی بھی کئی اقسام کی واحد جڑ قرار دی جاتی ہے۔ یہی وجہ ہے کہ عالمی قوانین کے تحت سگریٹ اور تمباکو سے بنی دوسری مصنوعات کے اشتہارات پر مکمل پابندی عائد ہے جبکہ تمباکو پر مبنی مصنوعات کے پیکٹوں پر بھی ان کے مضر صحت اثرات سے متعلق تحریری اور تصویری انتباہی پیغامات (وارننگز) کو مزید نمایاں کردیا گیا ہے۔
اس کے باوجود، ماہرین کا کہنا ہے کہ سگریٹ نوشی کم کرنے یا ترک کرنے کے معاملے میں یہ پیغامات سب سے کم توجہ حاصل کرپاتے ہیں اور تمباکو نوش عام طور پر انہیں نظر انداز کردیتے ہیں۔
عوامی صحت کے مختلف اداروں نے ’’سگ بریک فری‘‘ کو ایک خوش آئند اختراع قرار دیتے ہوئے تمباکو نوشوں سے درخواست کی ہے کہ وہ اپنی ذاتی صحت اور اپنے اہلِ خانہ کی بہتری کےلئے اس ایپ کو ایک بار ضرور آزما کر دیکھیں۔ سگ بریک فری کو گوگل پلے سے مفت میں ڈاؤن لوڈ کیا جاسکتا ہے۔

بولنے سے قاصر کینسر کے مریضوں کے لیے مصنوعی ’ وائس باکس‘ کی کامیاب آزمائش

0 comments
فرانسیسی کمپنی نے کینسر کی وجہ سے بولنے سے معذور افراد کے لیے ایک پیوند تیار کیا ہے جس کے بعد لوگ بولنے کے قابل ہوسکیں گے، تصویر میں بیرونی طور پر وہ مقام نظر آرہا ہے جہاں وائس باکس موجود ہوتا ہے۔ فوٹو: فائل
فرانسیسی کمپنی نے کینسر کی وجہ سے بولنے سے معذور افراد کے لیے ایک پیوند تیار کیا ہے جس کے بعد لوگ بولنے کے قابل ہوسکیں گے، تصویر میں بیرونی طور پر وہ مقام نظر آرہا ہے جہاں وائس باکس موجود ہوتا ہے۔ فوٹو: فائل

فرانس میں ایجاد کردہ ایک مصنوعی ’ وائس باکس‘ کو ایک شخص میں لگایا گیا ہے جس کے بعد اسے بولنے میں مدد ملی ہے۔
حلق کے کینسر میں گلے کے درمیان لگا پیچیدہ وائس باکس ( صوتی باکس) لیرنکس کہلاتا ہے ۔ اسے نکالنے کے صورت میں مریض اپنی آواز سے محروم ہوجاتے ہیں۔
اس نئی ٹیکنالوجی کے بعد ایک 56 سالہ شخص باآسانی بولنے کے قابل ہوگیا اور اب اسے سانس لینے میں بھی بہت آسانی ہے۔ تجرباتی طور پر پہلا مصنوعی وائس باکس فرانس کے شہر ایلسیک کے ایک شخص کو 2015 میں لگایا گیا تھا اور 16 ماہ بعد بھی اس کی زندگی بہت بہتر ہوگئی ہے۔
00:00
00:02
یہ مصنوعی وائس باکس فرانسیسی کمپنی پروٹِپ میڈیکل نے تیار کیا ہے جسے دنیا کا پہلا مصنوعی صوتی باکس کہا جاسکتا ہے۔ اسے تیار کرنے والے مرکزی ماہر نیہال انگن ورانہ کہتے ہیں کہ ’ دنیا کے پہلے مریض پر اس کی کامیاب آزمائش ہوئی ہے اور وہ کسی دقت کے بغیر سانس لے رہا اور بول رہا ہے۔ وائس باکس ہٹانے سے اس کے سونگھنے کی حس بھی متاثر ہوئی تھی جو اس آپریشن کے بعد مزید بہتر ہوگئی ہے۔
لیرنکس انسانی جسم میں دو اہم کردار ادا کرتا ہے ۔ اول ، اس میں موجود صوتی تار ہلنے سے ہماری آواز بنتی ہے اور دوم کھانے کے دوران یہ بند ہوکر خوراک کو وائس باکس کے اندر جانے سے روکتا ہے۔ حلق کے کینسر کے مریضوں میں آپریشن کرکے اسے نکال دیا جاتا ہے اور صرف امریکہ میں ہی سالانہ 13 ہزار سے زائد ایسے واقعات پیش آتے ہیں.

الأربعاء، 4 يناير، 2017

چیف جسٹس پاکستان نے کمسن ملازمہ پر تشدد کے واقعے کا از خود نوٹس لے لیا

0 comments
چیف جسٹس نے رجسٹرار اسلام آباد ہائی کورٹ سے واقعے کی تفصیلی رپورٹ 24 گھنٹے میں طلب کرلی ہے۔ فوٹو : فائل
چیف جسٹس نے رجسٹرار اسلام آباد ہائی کورٹ سے واقعے کی تفصیلی رپورٹ 24 گھنٹے میں طلب کرلی ہے۔ فوٹو : فائل

 اسلام آباد: چیف جسٹس پاکستان نے ایڈیشنل سیشن جج اسلام آباد کے گھر کام کرنے والی کمسن ملازمہ پر تشدد کے واقعے کا از خود نوٹس لے لیا ہے۔
چیف جسٹس پاکستان جسٹس ثاقب نثار نے وفاقی دارالحکومت میں ایڈیشنل سیشن جج کے گھر کام کرنے والی کمسن ملازمہ پر تشدد کے واقعے کا از خود نوٹس لے لیا ہے، چیف جسٹس نے بچی پر تشدد اور گزشتہ روز فریقین کے درمیان طے پانے والے معاہدے پر رجسٹرار اسلام آباد ہائی کورٹ کو 24 گھنٹے میں رپورٹ پیش کرنے کا حکم دیا ہے۔
گزشتہ روز حاضر سروس ایڈیشنل سیشن جج خرم علی خان اور ان کی اہلیہ کے ہاتھوں مبینہ طور پر تشدد کا شکار ہونے والی کمسن بچی طیبہ کے والدین نے اپنا کیس واپس لے کر راضی نامہ کرلیا تھا۔
واضح رہے کہ چند روز قبل اسلام آباد کے ایڈیشنل سیشن جج کے گھر میں ملازمت کرنے والی بچی طیبہ پر تشدد کے واضح ثبوت ملے تھے جس کے بعد جج اور ان کی اہلیہ کے خلاف مقدمہ بھی درج کرلیا گیا تھا۔

شامی شہر حلب میں پاکستان بیکری کے نام سے روٹی کیمپ قائم

0 comments
پاکستان بیکری سے روزانہ ایک لاکھ روٹیاں حلب اور دیگر شہروں میں جنگ سے متاثرہ افراد میں تقسیم کی جا رہی ہیں. فوٹو: فائل
پاکستان بیکری سے روزانہ ایک لاکھ روٹیاں حلب اور دیگر شہروں میں جنگ سے متاثرہ افراد میں تقسیم کی جا رہی ہیں. فوٹو: فائل

حلب: شام کے جنگ زدہ شہر حلب میں پاکستانی نژاد ترک شہری نے متاثرہ شہریوں میں خوراک کی قلت کو پورا کرنے کے لیے پاکستان بیکری کے نام سے روٹیاں بنانے کا کیمپ قائم کر دیا۔
پاکستان بیکری کے نام سے قائم کردہ روٹی کیمپ سے حلب اور اس کے قریبی شہروں میں روٹیاں تقسیم کی جائیں گی، لوگوں کی مدد کے لیے خوبائب فاونڈیشن کی جانب سے پاکستان بیکری کے نام سے ایک کیمپ میں روٹیاں بنانے کا کارخانہ نصب کیا گیا ہے۔
پاکستانی نژاد ترک شہری نے کچھ لوگ رکھے ہوئے ہیں جو روزانہ ایک لاکھ روٹیوں کے بیگ حلب اور اس کے قریبی شہروں میں جنگ سے متاثرہ افراد میں تقسیم کر رہے ہیں۔

صرف 15 سیکنڈ میں چارج ہوجانے والی الیکٹرک میٹرو بس

0 comments
جنیوا ایئرپورٹ سے شہر کے مختلف علاقوں تک چلنے والی ان بسوں کے اسٹاپ بھی خاص طرح سے ڈیزائن کیے گئے ہیں۔ فوٹو؛ فائل
جنیوا ایئرپورٹ سے شہر کے مختلف علاقوں تک چلنے والی ان بسوں کے اسٹاپ بھی خاص طرح سے ڈیزائن کیے گئے ہیں۔ فوٹو؛ فائل
جنیوا: سوئٹزرلینڈ کے دارالحکومت میں تجرباتی طور پر ایسی بڑی الیکٹرک میٹرو بسیں چلائی جارہی ہیں جن کی بیٹریاں صرف 15 سیکنڈ میں چارج ہوجاتی ہیں اور یہ تیزی سے دوبارہ اپنی منزل کی طرف گامزن ہوجاتی ہیں۔
بجلی سے چلنے اور تیزی سے چارج ہونے والی یہ میٹرو بسیں سوئٹزر لینڈ کی مختلف کمپنیوں نے حکومت کے تعاون سے تیار کی ہیں۔ ایسی ہر بس کے نچلے حصے میں بیٹریاں نصب ہیں جب کہ چھت پر ایک قابلِ حرکت آنکڑا ہے۔
جنیوا ایئرپورٹ سے شہر کے مختلف علاقوں تک چلنے والی ان بسوں کے اسٹاپ بھی خاص طرح سے ڈیزائن کیے گئے ہیں جن میں خاصی اونچائی پر چارجنگ پلگ لگے ہوئے ہیں۔ بس جیسے ہی اسٹاپ پر پہنچ کر رکتی ہے تو مسافروں کے چڑھنے اور اترنے کے درمیانی وقفے میں ہی بس کی چھت والا آنکڑا، اسٹاپ پر لگے ہوئے چارجنگ پلگ کو جکڑ لیتا ہے اور صرف 15 سیکنڈ کی مختصر مدت میں بس کی بیٹریوں کو 600 کلو واٹ جتنی بجلی دے کر چارج کردیتا ہے۔
صرف 15 سیکنڈ تک چارج ہونے کے بعد ایسی ایک بس اپنے 130 مسافروں کو لے کر 2 کلومیٹر تک مزید سفر کرسکتی ہے جب کہ بس ٹرمینل (بس اڈے) پر پہنچ کر اس کی بیٹریوں کی مکمل چارجنگ میں 4 سے 5 منٹ لگتے ہیں۔
سوئس حکام کا کہنا ہے کہ 2018 تک جب یہ سروس پوری طرح سے شروع ہوجائے گی تو ان بسوں کے ذریعے روزانہ 10 ہزار سے زیادہ افراد کو پبلک ٹرانسپورٹ کی سہولت میسر آئے گی جب کہ اس سے فضائی آلودگی کم سے کم سطح پر رکھنے میں بھی بہت مدد ملے گی۔

الأحد، 1 يناير، 2017

شمالی کوریا کا بین البراعظمی میزائل کا تجربہ کرنے کا اعلان

0 comments
بہت جلد بین البراعظمی میزائل کا تجربہ کیا جائے گا، سربراہ شمالی کوریا۔ فوٹو: فائل
بہت جلد بین البراعظمی میزائل کا تجربہ کیا جائے گا، سربراہ شمالی کوریا۔ فوٹو: فائل

پیانگ یانگ: شمالی کوریا کے سربراہ کم جونگ نے دعویٰ کیا ہے کہ ان کا ملک بین البراعظمی میزائل کی تیاری کے آخری مراحل میں ہے اور بہت جلد طویل فاصلے تک مار کرنے والے میزائل کا تجربہ کیا جائے گا۔
سال نو کے موقع پر پیانگ یانگ سے جاری پیغام میں شمالی کوریا کے سربراہ کم جونگ ان نے دعویٰ کیا ہے کہ ان کا ملک طویل فاصلے تک ہدف کو نشانہ بنانے والے بین البراعظمی میزائل بنانے کے قریب ہے اور میزائل کے تجربے کی تیاریاں آخری مراحل میں ہیں جب کہ میزائل جوہری ہتھیار ساتھ لے جانے کی بھی بھرپور صلاحیت رکھتا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ شمالی کوریا بہت جلد بین البراعظمی میزائل کا تجربہ کرے گا۔
گزشتہ سال بھی شمالی کوریا نے کامیاب جوہری تجربہ کرنے کا دعویٰ کیا تھا جس کے باعث شمالی کوریا میں 5.3 شدت کا زلزلہ بھی محسوس کیا گیا جب کہ اس سے قبل شمالی کوریا نے ہائیڈروجن بم کا بھی کامیاب تجربہ کیا تھا۔
واضح رہے کہ اقوام متحدہ نے شمالی کوریا پر کسی بھی طرح کے جوہری یا میزائل ٹیکنالوجی کا تجربے کرنے پر پابندی عائد کر رکھی ہے لیکن اس کے باوجود شمالی کوریا کئی بار بلیسٹک میزائل کے تجربات کرچکا ہے جب کہ شمالی کوریا امریکا سمیت دیگر ممالک پر جوہری ہتھیاراستعمال کرنے کی دھمکی بھی دے چکا ہے۔

بچی نے سوئی ہوئی والدہ کا فون پر انگوٹھا لگواکر آن لائن کھلونے منگوالیے

0 comments
امریکا میں 6 سالہ بچی نے اپنی والدہ کا فون پر انگوٹھا لگوا کر لاک کھولا اور 25 ہزار کی آن لائن خریداری کرلی۔
فوٹو: بیٹنی جانسن ہوویل فیس بک پیج
امریکا میں 6 سالہ بچی نے اپنی والدہ کا فون پر انگوٹھا لگوا کر لاک کھولا اور 25 ہزار کی آن لائن خریداری کرلی۔ فوٹو: بیٹنی جانسن ہوویل فیس بک پیج

آرکنساس: امریکا میں 6 سالہ بچی نے کمال چالاکی سے نیند کی آغوش میں اپنی ماں کا انگوٹھا لگوا کر اس کا فون کھولا اور 250 ڈالر کے آن لائن تحفے خرید لیے۔
امریکا کی رہائشی خاتون کی 6 سالہ بیٹی نے نیند کے دوران بہت احتیاط سے اپنی والدہ کےانگوٹھے کے فنگر پرنٹس سے ایمیزون ایپ کھول کر اس سے کرسمس کے تحفے خریدے۔ یہ تمام کھلونے پوکے مون سے تعلق رکھتے تھے جو ایمیزون سے منگوائے گئے تھے۔
جب ایمیزون کی جانب سے بچی کی ماں کو خریداری کی اطلاع دی گئی تو ماں کا اصرار تھا کہ ان کا یمیزون اکاؤنٹ ہیک ہوگیا ہے۔ لیکن بعد میں بیٹی نے اعتراف کیا کہ اس نے اپنی والدہ کا آئی فون اس وقت کھولا جب وہ نیند میں تھیں اور اس کے بعد ایمیزون ویب سائٹ سے اپنے پسندیدہ کھلونوں کا آرڈر دیدیا۔
خاتون نے کچھ کھلونے واپس کردیئے لیکن بقیہ کھلونوں کو لوٹانا ممکن نہ تھا۔ اس 6 سالہ بچی کو اخبارات نے ’’چائلڈ جینیئس‘‘ قرار دیا ہے کیونکہ یہ اپنی نوعیت کا ایک منفرد واقعہ ہے۔ ایمیزون نے حال ہی میں ایک ایپ متعارف کرائی ہے جو پاس ورڈ کی بجائے فنگر پرنٹ سے سرگرم ہوتی ہے۔